پاکستانی طالبان کے خود کش حملے میں میجر سمیت دو سیکورٹی اہلکار ہلاک 10زخمی

پشاوور:امن دشمنوں نے ایک بار پھر پشاور کو اس وقت اپنی دہشت گردی کا نشانہ بنا کر لہولہان کر دیا جب پاکستانی طالبان انتہا پسند گروہ کے ایک خود کش بمبار نے نیم فوجی دستے سے بھری ایک گاڑی کو نشانہ بنا کراسے اپنی دھماکہ خیز مواد سے بھری گاڑی سے ٹکرا دیا جس میں ایک میجر سمیت دو سیکورٹی اہلکار ہلاک اور10دیگر زخمی ہو گئے۔ پشاور کے علاقے حیات آباد میں ہونے والے اس خودکش دھماکے سے جو دو سیکورٹی اہلکار ہلاک اور دس زخمی ہوئے ہیں ان کا تعلق فرنٹیئر کانسٹیبلری (ایف سی) سے ہے۔ واقعہ کے بعد امدادی ٹیموں نے زخمیوں کو فوراً قریبی اسپتال منتقل کیا جہاں انہیں طبی امداد فراہم کی جارہی ہے۔
سپرنٹنڈنٹ پولیس (ایس پی) آپریشن سجاد خان کے مطابق دھماکا حیات آباد میں باغ ناران چوک کے نزدیک سیکیورٹی فورسز کے گاڑی کے قریب ہوا۔ دھماکے میں ایف سی میجر سمیت دو اہلکار شہید جبکہ سیکیورٹی فورسز کی دو گاڑیاں بری طرح متاثر ہوئیں۔سیکیورٹی ذرائع کے مطابق ایف سی کی گاڑی معمول کے گشت پر تھی کہ اچانک خود کش حملہ آور نے اپنی دھماکہ خیز مواد سے بھری گاڑی سے سیکورٹی فورس کی گاڑی کو ٹکر مار دی۔گورنر خیبر پختونخوا اقبال ظفر جھگڑا نے پشاور دھماکے کی شدید مذمت کی اور غمزدہ خاندانوں کے ساتھ ہمدردی کا اظہار کیا۔ انہوں نے یقین دہانی کروائی کہ واقعے میں ملوث افراد کو بہت جلد کیفر کردار تک پہنچایا جائے گا۔تحریک طالبان پاکستان نے اس حملہ کی ذمہ داری قبول کر لی ہے۔

Title: taliban suicide bomber attacks paramilitary forces convoy in peshawar | In Category: پاکستان  ( pakistan )