افغانستان میں 100دن قبل اغوا پاکستانی انجینیر بازیاب کرا لیا گیا

راولپنڈی: سال رواں کے اوائل میں افغانستان میں اغوا کر لیے جانے والا ایک پاکستانی انجینیئر بخیر و عافیت پاکستان واپس آگیا۔تفصیل کے مطابق راولپنڈی کا رہائشی ملک فیض احمد کو، جو افغانستان میں طرخوم ۔جلال آباد روڈ پراجکٹ پر کام کر رہا تھا، 21اگست کو اغوا کر لیا گیا تھا ۔ انجینئر ملک فیض کی واپسی کے بعد راولپنڈی میں ان کے بیٹے فرحان ملک نے اپنے والد کی بازیابی پر پاکستانی فوج اور میڈیا کا شکریہ ادا کیا۔ فرحان نے مزید کہا کہ ان کے والد صحت مند ہیں ۔ بازیابی کے بعدانجینئر ملک فیض نے ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا ہے کہ مجھے رواں سال اگست میں کالعدم جماعت الاحرار کے دہشت گردوں نے اغواء کیا تھا اور رہائی کے عوض 10 لاکھ ڈالر تاوان طلب کیا تھا جبکہ اغوا کاروں نے 105 دن تک بد ترین تشدد کا نشانہ بنایا اور تشدد کی ویڈیو سوشل میڈیا پر بھی جاری کی تاکہ گھر والے خوف زدہ ہو کر جلد از جلد تاوان کی رقم کا بندوبست کریں۔انجینئر ملک فیض نے اپنی بازیابی پر پاک فوج کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا ہے کہ آج مجھے پاکستانی فوج کے باعث نئی زندگی ملی ہے جس پر میں اور میرے اہل خانہ فوجی سربراہ قمر باجوہ اور ایک ایک سپاہی کے شکر گزار ہیں۔

Title: pakistani engineer abducted in afghanistan returns home | In Category: پاکستان  ( pakistan )